سانحہ ساہیوال تحقیقات، جے آئی ٹی کی حتمی رپورٹ میں اہم انکشاف

    0
    256
    سانحہ ساہیوال تحقیقات، جے آئی ٹی کی حتمی رپورٹ میں اہم انکشاف
    سانحہ ساہیوال تحقیقات، جے آئی ٹی کی حتمی رپورٹ میں اہم انکشاف

    لاہور: (بول نیوز) سانحہ ساہیوال میں خلیل اور اس کا خاندان کو بے قصور قرار دے دیا گیا۔

    جے آئی ٹی رپورٹ وزیراعلیٰ پنجاب کو پیش کر دی گئی۔

    رپورٹ میں ذیشان کو قصور وار ٹھہرایا گیا جبکہ آپریشن میں حصہ لینے والے اہلکاروں کے خلاف کارروائی کی سفارش کی گئی ہے۔

    سانحہ ساہیوال کی تحقیقات کرنے والی مشترکہ تحقیقاتی ٹیم کی حتمی رپورٹ تیار، ذرائع کے مطابق جے آئی ٹی رپورٹ کے مدنظر ذیشان کو قصور وار ٹھہرا دیا گیا جبکہ خلیل اور اس کا خاندان بے قصور قرار دیا گیا۔

    ذیشان کے بھائی نے گھر میں مشکوک افراد کے آنے جانے کا بھی اعتراف کر لیا ہے۔

    جے آئی ٹی رپورٹ میں آپریشن میں حصہ لینے والے اہلکاروں کے خلاف کارروائی کی سفارش کی گئی ہے۔

    رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ آپریشن میں حصہ لینے والے اہلکاروں نے غلط بیانی سے کام لیا۔

    گاڑی سے گولیاں نہیں چلائی گئیں تھیں۔ خلیل کے خاندان کو بچایا جا سکتا تھا۔ سانحہ کے بعد شواہد میں رد و بدل کی کوشش کی گئی۔

    شواہد میں رد و بدل کرنے کے خلاف بھی کارروائی کی جائے۔ وزیراعلی پنجاب کو سانحہ ساہیوال پر جے آئی ٹی رپورٹ پیش کر دی گئی۔

    واضع رہے کہ19 جنوری پولیس کے محکمہ انسداد دہشت گردی (سی ٹی ڈی) نے ساہیوال جی ٹی روڈ پر ایک مشکوک مقابلے کے دوران گاڑی پر اندھا دھند فائرنگ شروع کر دی تھی، جس کے نتیجہ میں ایک خلیل نامی شہری اور اس کی اہلیہ اور 13 سالہ بیٹی سمیت 4 افراد جاں بحق اور تین بچے زخمی ہوئے تھے اور اس مقابلے میں 3 مبینہ دہشت گردوں کے فرار ہونے کا دعویٰ بھی کیا گیا تھا۔

    واقعے کی تحقیقات کے کیلئے ملوث سی ٹی ڈی اہلکاروں کو حراست میں لے لیا گیا تھا اور جے آئی ٹی تشکیل دے دی گئی تھی


    LEAVE A REPLY

    Please enter your comment!
    Please enter your name here